Kangi Karne Ka Sahi Tarika

کنگھی کرنے کا بہترین طریقہ - How to comb hair properly - Baloo ma kangi karne ka tarika - Balo Mein Kanghi Kaise Kare

Kangi Karne Ka Sahi Tarika

کنگی اور برش کے استعمال میں مندرجہ ذیل ہدایات پر عمل کریں

۔ بالوں کی صفائی کے لیے چھوٹے دندانوں کی کنگھی استعمال کی جائے۔ اس سے بالوں میں جمع شدہ میل اور گر د دور ہوجاتی ہے اور ان کی اچھی طرح صفائی ہوجاتی ہے۔ اس کے علاوہ بالوں کو بار بار دھونے کی ضرورت پیش نہیں آتی۔ اس قسم کی کنگھی سے بال صاف کرتے وقت بالوں پر کھنچاؤ محسوس ہوتا ہے جیسے سر کی جلد میں خون کے دورانیا کو تیز کرنے کا باعث ہوتا ہے۔ اس سے بالوں کی جڑیں مضبوط ہوتی ہیں اور ان کی صحت پر خوشگوار اثر پڑتا ہے۔

۔ یہ تسلی کر لی جائےکہ کنگھی صاف اور اعلی کوالٹی کی ہو۔ میلی کچیلی کنگھی سر میں جراثیم اور انفیکشن پھیلاتی ہے۔

۔ تیزدندا نوں والی کنگی استعمال نہ کی جائے۔ اس سے سر کی جلد کے زخمی ہونے اور بالوں کی ساخت کو نقصان پہنچنے کا خطرہ ہوتا ہے۔

baloo ma kangi karne ka sahi tarika

۔ جب بال الجھے ہوئے ہو ں تو ان کو آہستہ آہستہ کنگھی کر کے سیدھا کریں۔ بالوں کے سروں کی طرف سے کنگھی کرنا شروع کریں اور آہستہ آہستہ ان کو سیدھا کرتے ہوئے جڑوں کی طرف بڑاھتے جائیں۔

۔ بالوں کو گیلا کر کے ان پر نرمی سے کنگھی کریں۔ خشک بالوں پر کنگھی کرنے سے بال ٹوٹنے کا خطرہ ہوتا ہے۔

۔ بالوں کو صرف اسی وقت برش کریں جب اس کی ضرورت ہو۔ بہت زیادہ برش کرنے سے بالوں کی ساخت کو نقصان پہنچنے اور ان کے سرے خراب ہو جانے کا اندیشہ ہوتا ہے۔

۔ بال گرتے اور پیدا ہوتے رہتے ہیں۔ اس لئے اگر ان کو سنوارتے ہوئے کچھ بال کنگی کے ساتھ اکھڑکر آجائیں تو فکر مند ہونے کی کوئی ضرورت نہیں۔ عام حالات میں کنگھی کرتے وقت  سر کی جلد سے  تیس سے سو کی تعداد تک بال نکلتے ہیں۔

Read in roman Urdu / roman Hindi

BALON KI KANGI KARNE KA SAHI TARIKA

Kangi aur brush ke istemal mai mandarja zail hidayaat par amal karain:

1. Balon ki safai or kangi karne ka sahi tarika apna,ne keliye chote dandanon ki kangi istemal ki jaye. Es se balon mai jama shudda meil aur gard door hojati hai aur balon ki achi tarhan safai ho jati hai. Iske ilawa balon ko bar bar dhone ki zarurat pesh nahi ati. Is qisam ki kangi se bal saf karte waqat balon par khinchao mehsoos hota hai jo sar ki jild mai khoon ke doraniaye ko tez karne ka bais hota hai. Ese balon ki jarain mazboot hoti hain aur inki sehat par khushgawar asar parta hai.

2. Yeh tasalli Karli jaye keh kangi saaf aur aala quality ki ho.

3. Meli kacheli kangi sar mai jaraseem aur infection phelati hai.

4. Taiz dandanon wali kangi istemal nah ki jaye. Es se sar ki jild ke zakhmi hone aur balon ki sakht ko nuqsaan pohanchne ka khatra hota hai.

5. Kangi karne ka sahi tarika yeh ha k Jab bal uljhe huay hon tou unko ahista ahista kangi kar ke sidha karain. Balon ke siron ki taraf se kangi karna shurru karain aur ahista ahista inko sidha karte huay jarron ki taraf barhate jaye.

6. Sahi tor par kangi karne ka tarika yeh ha k balon ko gila kar ke in par narmi se kangi ki jae. khushk balon par kangi karne se bal tutne ka khatra hota hai.

7. Balon ko sirf ussi waqat brush karain jab iski zarurat ho. Bohat ziyadha brush karne se balon ki saakht ko nuksan pohanchne aur inke sirre kharab ho jane ka andesha hota hai.

8. Bal girte aur paida hote rahte hain. Isliye agar inko sanwarte huay kuch bal kangi ke sath akhar kar ajyein tou fikar mand hone ki koi zarurat nahi. Aam halaat mai kanghi karte waqat sar ki jild se 30 se 100 ki tadad tak bal nikalte hain.