Dant Ka Keera Ka Ilaj | Danto Ki Cavity, Fori Nijat Paien

Danto ki cavity ka ilaj kaise mumkin ha. Abhi janeay dant ka keera ka ilaj in Urdu. Dant keda khatam karne ka gharelu tarika

Dant Ka Keera Ka Ilaj | Danto Ki Cavity, Fori Nijat Paien

منہ کے اندر موجود جراثیم اور دانتوں پر لگے کھانے کے زرے دونوں مل کر منہ کے اندر ایک ایسا تیزاب پیدا کرتے ہیں جس کی وجہ سے دانتوں کو کیلشیم کی کمی کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور دانت میں سوراخ ہوجاتا ہے جسےعام لفظوں میں کھوڑ بولا جاتا ہے۔ ہمارے ہاں اس بیماری کو دانت کا کیڑا بھی کہا جاتا ہے۔ یہ بیماری زیادہ تر تین سال کے بچوں میں پائی جاتی ہے۔ بڑی عمر کے لوگو‌ں میں بھی یہ بیماری عام ہے۔

دانتوں میں کیڑا لگنے کی وجہ
کیڑا لگنے کے تین اسباب ہو سکتے ہیں۔

.1
جراثیم کا منہ میں موجود رہنا۔

.2
کھانا کھانے کے بعد غذا کے ٹکڑوں کا دانتوں سے چپک جانا۔

.3
موروثی کمزوری کی وجہ سے دانتوں کا خراب ہونا۔


دانتوں کا کیڑا لگنے سے بچاؤ کی تدابیر
مندرجہ ذیل باتوں پرعمل کر کے دانتوں کو کیڑا لگنے سے بچایا جا سکتا ہے۔

.1
کھانا کھانے کے بعد برش لازمی کریں۔

.2
ایسی غذا کا استعمال کریں جس میں قدرتی اجزاء زیادہ مقدار میں شامل ہوں۔

.3
دانتوں کے ڈاکٹر سے سال میں کم از کم ایک مرتبہ لازمی رجوع کریں۔

danto ki cavity ka ilaj

     اگر دانتوں میں کیڑا لگا ہو تو ایسی صورت حال میں کیا کرنا چاہیۓ؟
ایسا شخص جس کے دانت میں کیڑا لگا ہو، وہ فوراً ڈاکٹر سے رجوع کرے ورنہ یہ کیڑا دانت کی جڑ تک پہنچ جاۓ گا اور اسے مکمل طور پر خراب اور نکارہ کر سکتا ہے۔ ہرسال بعد دانتوں کا چیک اپ کروائیں ہو سکتا ہے کہ اگر دانت میں کوئی کھوڑ موجود ہو تو اس کھوڑ کو بھرا جا سکے۔ ہر کھانا کھانے کے بعد دانتوں کو فوراً صاف کرنا ضروری ہے۔ اس کے علاوہ میٹھے مشروبات کم سے کم استعمال کریں۔ بچوں کو چاکلیٹ، کینڈیز اور باقی میٹھی اشیاء کا کم سے کم استعمال کرائیں۔

دانتوں کے کیڑے کا گھریلو علاج

.1
نمک پانی
نمکین پانی سے دانتوں میں پایا جانے والا چپچپا پن دور ہوتا ہے جس سے دانت کا کیڑا یعنی کھوڑ میں کمی واقع ہوتی ہے اور اس طرح نمک کا بنایا ہوا پانی کارآمد ثابت ہوتا ہے۔ 
نمک پانی تیار کرنے کا طریقہ: ایک گلاس پانی لیں اور اسے نیم گرم کریں۔ اب اس میں آدھا چمچ نمک شامل کر کے اچھی طرح کلی کریں۔

.2

امرود کے پتے
امرود کے پتوں میں بے شمار جراثیم کش خصوصیات پائی جاتی ہیں جو دانتوں میں لگے کیڑے کو ختم کرنے میں معاون ثابت ہوتے ہیں۔ 
استعمال کا طریقہ: امرود کے پتوں کو سکھا کر پیس لیں اور گرم پانی میں پکائیں یہاں تک کے قہوہ بن جاۓ۔ اب اس قہوے کو کلی کرتے ہوۓ استعمال کیا جاۓ۔

.3

وٹامن ڈی
وٹامن ڈی دانتوں کی نشونما کا بہترین ذریعہ ہے۔ یہ وٹامن دانتوں کی کھوڑ کو ختم کرنے کے ساتھ ساتھ منہ میں موجود تذابیت کو زائل کرتا ہے۔ وٹامن ڈی کے حصول کیلۓ وٹامن ڈی سے بھرپور غذاؤں کو استعمال میں لے کر آیا جا سکتا ہے مثلاً مچھلی، مالٹا،  ڈیری مصنوعات، بیف جگر، پالک، سویابین اور بھنڈی وغیرہ۔

.4

لیموں
لیموں میں پایا جانے والا سائٹرک ایسڈ دانتوں میں موجود میل کچیل کو دور کرنے میں مدد کرتا ہے۔ دانتوں کیلۓ لیموں کا استعمال بہت مفید ہے کیونکہ اس کے استعمال سے خاص طور پر دانت کا کیڑا ختم ہونے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں۔
استعمال کا طریقہ: چند منٹوں تک لیموں کو چبائیں اور اس کے بعد نیم گرم پانی سے کلی کر لیں۔

Read in Roman Urdu / Roman Hindi

Mun ke andar mojod jaraseem aur danto par lage khane ke zare dono mil kar mun ke andar aik aisa tezaab paida karte han jis ki wajah se danto ko calcium ki kami ka saamna karna parta ha aur dant mein sorakh ho jata ha jise aam lafzon ma khoor (tooth cavity) bola jata ha. Hamare haan es bemari ko dant ka keera (tooth decay) bhe kaha jata ha. Yeh bemari ziyada tar 3 saal ke bachon ma pae jati ha. Barri umar ke logon ma bhe yeh bemari aam ha.

DANT KA KEERA LAGNE KI WAJAH

keera lagne ke teen asbaab ho satke hain.
1. Jaraseem ka mun ma mojood rehna.
2. Khana khane ke baad ghiza ke tukron ka danto se chipak jana.
3. Moroosi kamzori ki wajah se danto ka harab hona.

DANTO KA KEERA LAGNE SE BACHAO KI TADABEER AUR TEETH KI CAVITY KA ILAJ

Mandarja zail baton par amal kar ke danto ka keera ka ilaj ko mumkin banaya ja sakta ha.
1. Khana khane ke baad brush lazmi karen.
2. Aisi ghiza ka istemal karen jis ma qudarti ajza ziada miqdar ma shaamil hon.
3. Danto ke specialist docotr se saal ma kam az kam aik martaba cavity ka ilaj krwane k liay laazmi rujoo karen.

AGAR DANT MAIN KEERA LAGA HO TO AISI SOORAT E HAAL MEIN KYA KARNA CHAHIAY?

Aisa shakhs jis ke dant me keera laga ho, wo foran dant ka keera ka ilaj karwane k liye danto ke doctor se rujoo kare warna yeh keda dant ki jarr tak pahanch jae ga aur usay mukamal tor par harab aur nakara kar sakta ha. Har saal baad danto ka checkup karwae ho sakta ha ke agar dant ma koi khoor (cavity) mojood ho to es khoor ko bhara ja sakay. Har khana khanay ke baad danto ko foran saaf karna zaroori ha. Es ke ilawa methay mashrobat kam se kam istemaal karen. Bachon ko chocolate, candies aur baqi meethi ashya ka kam se kam istemaal karayen.

DANT KA KEERA KA ILAJ IN URDU - TOOTH DECAY KA NATURAL GHARELO ILAJ 

1. 
NAMAK PANI

Namkeen pani se danto mein paaya jane wala chip chapa pan daur hota ha jis se dant ka keera yani khoor ma kami waqia hoti ha aur is terhan namak ka banaya huwa pani kar-amad sabit hota ha.
Namak Pani Se Dant Ka Keera Khatam Karne Ka Tarika: Aik glass pani len aur esay naem garam karen. Ab es mein aadha chamach namak shamil kar ke achi terhan kuli karen.

2.
AMROOD KE PATTE

Amrood ke patto ma be-shumaar jaraseem kash hasosiyat pae jati hain jo danto ma lage keeray ko khatam karne mein muawin sabit hote hain.
Amrood Se Dant Main Keera Ka Ilaj Karne Ka Tarika: Amrood ke patto ko sukha kar pees len aur garam pani ma pakae, yahan tak ke qahwa ban jae. Ab is kahwe ko kuli karte huay istemaal kya jae.

3.
VITAMIN D

Vitamin D danto ki nash-o-numa ka behtareen zaria ha aur danto ki cavity ka ilaj mana jata ha. Yeh vitamin danto ki khoor ko hatam karne ke sath sath mun ma mojood tizabiat ko zaeel karta ha. Vitamin D ke husool ke liay vitamin D se bharpoor ghizaon ko istemaal ma le kar aaya ja sakta ha maslan machli, malta, dairy masnoaat, beef jigar, palak, soybean aur bhindi waghera.

4.
LEMOO

Lemoo ma paya jane wala citric acid danto ma mojood mael kuchel ko dour karne ma madad karta ha. Danto ke cavity ke liye lemoo ka istemaal bohat mufeed ha kyun ke is ke istemaal se khaas tor par dant ka keera khatam hone ke imkanaat barh jate han.
Lemoo Se Dant Ka Keera Ka Ilaj Karne Ka Tarika: Chand minton tak lemoo ko chabaen aur is ke baad neem garam pani se kulie kar len.